بُو سو کنار کرنے سے ش ر م گ ا ہ سے قطرے نکلیں غسل فرض ہو گا یا نہیں؟

بُو سو کنار کرنے سے ش ر م گ ا ہ سے قطرے نکلیں غسل فرض ہو گا یا نہیں؟

آپ کو پہلے منی اور مذی کی تعریف معلوم ہوکر فرق سمجھنا چاہئے، منی کہتے ہیں اس سفید گاڑھے پانی کو جو شہ وت کے ساتھ اچھل کر نکلے اور نکلنے کے بعد شہ وت ختم ہوجائے اس کے نکلنے سے غسل واجب ہوتا ہے۔ اور مذی کہتے ہیں اس سفید پتلے لس دار پانی کو جو بیوی سے دل لگی کرنے یا ہمب ستری کرنے سے پہلے یا کسی کے ساتھ شہ وت انگیز بات کرنے یا ش ہوت انگیز مناظر دیکھنے اور سننے سے بغیر اچھلے اور بغیر ش ہوت کے نکلے، اور اس کے نکلنے سے شہ وت ختم نہیں ہوتی بلکہ او ربڑھ جاتی ہے۔

آپ کو پہلے منی اور مذی کی تعریف معلوم ہوکر فرق سمجھنا چاہئے، منی کہتے ہیں اس سفید گاڑھے پانی کو جو شہ وت کے ساتھ اچھل کر نکلے اور نکلنے کے بعد شہ وت ختم ہوجائے اس کے نکلنے سے غسل واجب ہوتا ہے۔ اور مذی کہتے ہیں اس سفید پتلے لس دار پانی کو جو بیوی سے دل لگی کرنے یا ہمب ستری کرنے سے پہلے یا کسی کے ساتھ شہ وت انگیز بات کرنے یا ش ہوت انگیز مناظر دیکھنے اور سننے سے بغیر اچھلے اور بغیر ش ہوت کے نکلے، اور اس کے نکلنے سے شہ وت ختم نہیں ہوتی بلکہ او ربڑھ جاتی ہے۔

بد نظری یا برے خیالات کے بعد عموماً مذی نکلتی ہے لہٰذا صورت مسئولہ میں آپ کو جو قطرہ نکلتا ہے وہ بظاہر مذی معلوم ہوتا ہے جس کا حکم یہ ہے کہ اس سے وضو ٹوٹ جاتاہے، غسل واجب نہیں ہوتا اور کپڑے کے جس حصہ میں لگ جائے صرف اتنے حصہ کا دھونا ضروری ہوتا ہے، رہا نیند سے اٹھنے کے بعد آپ کو جو قطرہ نظر آتا ہے تو اگر آپ کو مذکورہ بالا تعریف کی روشنی میں یقین ہوجائے کہ یہ منی ہے خواہ خواب یاد ہو یا نہ ہو یا منی اور مذی ہونے میں شک ہو یا مذی ہونے کا یقین ہواور خواب یاد ہوتو غسل جناب ت واجب ہوگا

admin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *